Nahjul Balagha Urdu Unicode نہج البلاغہ اردو

نہج البلاغہ كلمہ قصار نمبر 228

جو دنیا کے لیے اندوہناک ہو وہ قضا و قدر الہی سے ناراض ہے

اور جو اس مصیبت پر کہ جس میں مبتلا ہے شکوہ کرے تو وہ اپنے پروردگار کا شاکی ہے

اور جو کسی دولت مند کے پاس پہنچ کر اس کی دولتمند ی کی وجہ سے جھکے تو اس کا دو تہائی دین جاتا رہتا ہے

اور جو شخص قرآن کی تلاوت کر ے پھر مر کر دوزخ میں داخل ہو تو ایسے ہی لوگوں میں سے ہوگا ‘جو اللہ کی آیتوں کا مذاق اڑاتے تھے

اور جس کا دل دنیا کی محبت میں وا رفتہ ہوجائے تو اس کے دل میں دنیا کی یہ تین چیزیں پیوست ہوجاتی ہیں۔ایسا غم کہ جو اس سے جدا نہیں ہوتا اور ایسی حرص کہ جو اس کا پیچھانہیں چھوڑتی اور ایسی امید کہ جو بر نہیں آتی۔